(چنیوٹ

 ایم پی اے مولانا محمد الیاس چنیوٹی نے  چنیوٹ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کی طرف سے تبلیغ پر پابندی  لگانے کے حکم کے خلاف پوائنٹ آف آرڈر پرصوبائی اسمبلی پنجاب میں احتجاج  کیا ھے اور کہا ھے کہ تبلیغ کرنے کا حکم خود اللہ تعالی نے اپنے نبی کو دیا  ھے اور حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے بڑی تاکید کے ساتھ اپنی امت کو یہ حکم  دیا ھے جب ہم قرآن مجید کو اپنا سپریم لاء مانتے ھیں تو اسکے خلاف کیسے حکم  دے سکتے ھیں اس لئے اس حکم کو مذہبی امور کی سٹینڈنگ کمیٹی کے حوالے کیا  جائے،قادیانی اور لاہوری مرزئی جو اپنے آپ کو احمدی بھی کہتے ہیں دائرہ  اسلام سے خارج ہیں اور ان کی ارتداد پر مبنی تبلیغ پر پابندی عائد ہے لیکن  ان کو آئین کا پابند بنانے کیلئے اس حکومت نے چپ سادھ رکھی ہے ان پر تو  کوئی مقدمہ قائم نہیں کیا جارہا نیز میں نے اس حکم کو ختم کرنے کے لئے ایک  قرار داد اور تحریک التواء بھی سیکرٹری اسمبلی کے آفس میں جمع کروادی ہے  ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ قادیانیوں سے انکم ٹیکس وصول نہیں  کیاجارہا قادیانی جماعتوں کو رفاہی تنظیمیں قرار دیکر انکم ٹیکس کی معافی  دی گئی ہے جو پاکستان کے دیگر شہریوں پر ظلم ہے ضرورت اس بات کی ہے کہ  قادیانی جماعتوں کو رفاہی جماعتیں قرار دیکر انکم ٹیکس کی چھوٹ فوری ختم  کیاجائے اور قادیانیوں کی تمام جماعتوں کا آڈٹ کرکے آمدنی پر انکم ٹیکس  وصول کیاجائے ۔

Post a Comment